کیا موقف ہونا چاہیے


کل بھی میں نے ایسے ہی ایک معاملے پر پوسٹ کی اور آج کی پوسٹ بھی کچھ ایسی ہی ہے جس میں اسم اللہ سے مشابہت ہی موضوع ہے۔ انٹرنیٹ پر کافی عرصے سے ای میل کے ذریعے ، فیس بک پر اور مختلف فورمز میں نائیک کمپنی کے ایک جوتے پرکافی بحث کی جا رہی ہے جس میں اللہ کے نام کو ایک ڈیزائن کی شکل میں پیش کیا جا رہا ہے، کمپنی والوں کا کہنا ہے کہ یہ ڈیزائن دراصل لفظ Air ہے، جو آگ کے شعلے کی شکل میں لکھا گیا ہے۔بہت سے مسلمان اس کے ردعمل میں نائیک کے جوتوں کو رد کر چکے ہیں۔ کچھ اسے فضول بحث سے تعبیر کرتے ہیں، کچھ اس مشابہت کو صرف ایک اتفاق گردانتے ہیں۔ میں نے اس ڈیزائن کو غور سے دیکھا ہے تو واقعی یہ Air لکھا گیا ہے اور اسکی اسم اللہ سے بھی مشابہت موجود ہے، اب پتہ نہیں یہ دانستہ طور پر کیا گیا یا غیر دانستہ اور مسلمان ہی اسے ضرورت سے زیادہ اہمیت دے رہے ہیں۔

کسی مولوی یا مولانا سے رائے لینا بھی فضول ہی ہے، کیوں کہ اکثر ان کی رائے مختلف ہی ہوتی ہے، قرآن پڑھ کر اس سے اس کے متعلق رہنمائی حاصل کرنا بھی ہر اک کے بس کی بات نہیں۔ آپ کیا رائے دیتے ہیں۔ اگر تو یہ دانستہ طور پر کیا گیا تب کیا کرنا چاہیے، اگر نادانستہ طور پر کیا گیا تب کیا کرنا چاہیے۔ اللہ تعالی کا نام ہم سب کے لیے محترم ہے اور یہ نام جوتے پر لکھا ہونا کسی بھی مسلمان کے لیے ناقابل برداشت ہے۔ تاہم اس سے پہلے تصدیق کے لیے کیا طریقہ اختیار کیا جائے۔الاسلام سوال جواب پر اسی سے متعلقہ ایک اور موضوع کوکا کولا کا لوگو، کا جواب دیا گیا ہےجو آپ یہاں پر ملاحظہ کر سکتے ہیں۔


About Yasir Imran

Yasir Imran is a Pakistani living in Saudi Arabia. He writes because he want to express his thoughts. It is not necessary you agree what he says, You may express your thoughts in your comments. Once reviewed and approved your comments will appear in the discussion.
This entry was posted in Islam, Urdu and tagged , , , , , , , . Bookmark the permalink.

7 Responses to کیا موقف ہونا چاہیے

  1. Pingback: Tweets that mention Keya moaqaf hona chahye « Yasir Imran Mirza -- Topsy.com

  2. کوکا تو ويسے بھی صحت کے ليے مضر ہے اور نائيک تو اتنا مہنگا ہے ويسے ہی ان دونوں کو استعمال نہيں کرنا چائيے

  3. Yasir Imran says:

    پھپھے کٹنی
    کیا زبردست پنجابی نام لیا ہے آپ نے
    میرے بلاگ پر خوش آمدید
    جو آپ نے کہا، کچھ حد تک مسلمان وہی تو کر رہے ہیں، لیکن سوال یہ ہے کہ اسم اللہ اور اسم اللہ سے مشابہت دونوں ہی قابل گرفت ہیں ؟

  4. شازل says:

    ایک بات تو طے ہے کہ ہم بائیکاٹ نہیں کرسکتے
    لیکن اگر ہمارا کوئی لیڈر آج ہی کسی چیز کے بائیکاٹ کا کہہ دے تو ہم اس کی تقلید میں بغیر سوچے اور سمجھے لگ جائیں گے
    ہماری قوم واقعی جزباتی ہے
    سوچ سمجھ تو ہے ہی نہیں

  5. السلام علیکم۔
    میرے خیال میں اگر نائیک والوں کو پروا ہوگی تو وہ خود ہی معاملہ ٹھنڈا کرنے کے لیے ڈیزائن بدل دیں گے۔
    باقی اسماء آنٹی والی بات کافی حد تک درست ہے۔ کوکا کولا کافی تیز مشروب ہے اور جسے بڑھاپے میں معدے کا مریض بننے کا شوق نہ ہو تو اسے اس سے ویسے ہی پرہیز کرنی چاہیے۔ اور مہنگے جوتے بلا ضرورت استعمال کرنا ویسے ہی فضول خرچی کے زمرے میں آتا ہے۔ بس جان چھڑاؤ، مٹی پاؤ اور موج مناؤ۔🙂

    جہاں تک مؤقف کی بات ہے تو مؤقف یہ ہونا چاہیے کہ کمپنی اس ڈیزائن کو بدلے تاکہ ہمیں ذرا سکھ کا سانس لینے کا موقع ملے ورنہ سر کھجاتے کھجاتے کھوپڑی گھِس جائے گی اور دماغ باہر نکل آئے گا۔

  6. ویسے بھی ہمیں اپنے مقامی جوتا سازوں کو زیادہ منافع دینا چاہیے اور اپنے ملک کا پیسہ (غیر ملکی مصنوعات خرید کر) باہر بھیجنے سے حتی الامکان گریز کرنا چاہیے۔

  7. Yasir Imran says:

    سعد صاحب

    نائیک والوں کو پرواہ کیا ہونی ہے، سوال تو یہ ہے کہ کیا مسلمانوں کو ایسے مسائل کو بہت زیادہ اہمیت دینی چاہیے ؟ اور اگر دینی چاہیے تو سیاسی ، تجارتی اور حکومتی سطحوں پر اقدامات کر کے ایسی چیزیں رکوانی چاہیں یا پھر ان کے خلاف عالمی سطح پر قوانین بنوانے چاہیں۔

    چند لوگ احتجاج کرتے ہیں، چند اسے کوئی مسئلہ ہی نہیں سمجھتے۔
    شکریہ اور میرے بلاگ کا چکر لگاتے رہیں

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s