رمضان میں درنبی پر حاضری


سعودی عرب میں روزگار کے لیے رہنے والوں کے لیے ایک سعادت کی بات یہ ہے کہ وہ جب چاہیں، حرمین شریفین کی زیارت کے لیے جا سکتے ہیں۔ سعودی عرب کے اکثر شہروں سے مکہ مکرمہ اور مدینہ منورہ جانے کے لیے بسیں دستیاب ہیں، تاہم بسوں سے بھی زیادہ تیز رفتار سفر ٹیکسی سے ممکن ہے، لیکن وہ کچھ حد تک خطرناک بھی ضرور ہوتا ہے کیوں کہ ڈرائیور حضرات ۱۸۰ سے لے کر ۲۰۰ کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے گاڑی چلاتے ہیں۔ سعودی حکومت نے کافی عرصہ سے مکہ جدہ اور مدینہ کو ملانے کے لیے ریلوے لائن کے منصوبے کا اعلان کر رکھا ہے تاہم اس پر ابھی تک عمل درامد نہیں ہو سکا۔ یقینن اگر ایسا منصوبہ مکمل ہو جاتا ہے تو زائرین کو مزید سفری آسانیاں میسر ہوں گی۔

جو تارکین وطن یہاں اپنی ملازمتوں کے سلسلے میں رہ رہے ہیں ان کے لیے آسانی کے ساتھ ایک مشکل بھی ہے کہ وہ زیادہ عرصہ حرمین شریفین میں نہیں رہ پاتے کیوں کہ ملازمت سے چھٹی لینا اتنا آسان نہیں ہوتا، اس کے برعکس عمرہ کے لیے آنے والے زائرین ایک ہفتہ یا اس سے بھی زیادہ قیام کر نے کی سعادت حاصل کرتے ہیں۔مجھے اپنی پانچ سالہ سعودی زندگی میں ایک بار بھی ایک ہفتہ تک مکہ یا مدینہ شریف مین قیام کرنے کی سعادت نصیب نہیں ہوئی۔
رمضان کے پچھلے ویک اینڈ پر مجھے مدینہ منورہ مسجد نبوی اور روزہ رسول پر حاضری کا موقع ملا، جمعرات کے دن ہاف چھٹی تھی اور جمعہ کا دن پوری، یہاں پر مختلف بس سروسز والوں نے ۲ دن، پانچ دن یا پندرہ دن کے پیکجز بنائے ہوے ہیں، میں نے دو دن وال پیکج لیا، آنے جانے کےٹکٹ ساٹھ یا ستر ریال میں دستیاب ہوتا ہے، میرا ایک بنگلہ دیشی دوست بھی میرے ساتھ تھا۔ہم رات کو گیارہ بجے روانہ ہوے، راستے میں ایک جگہ رک کر سحری کر لی، پھر صبح صادق کو ہم مدینہ شریف پہنچ گئے۔فجر کی نماز مسجد قبا میں ادا کی، پھر احد پہاڑ کی زیارت کی،جہاں غزوہ احد لڑا گیا، یہاں ساتھ ستر مجاہدین کی قبریں بھی ہیں، یہ صحابہ کرام اس لیے شہید ہوے کہ نبی اکرم صلی اللہ علیہ والہ وسلمنے غزوہ احد کے دوران کچھ تیر اندازوں کو احد پہاڑ پر معمور کیا تھا، لیکن لڑائی کے اختتام سے کچھ دیر پہلے وہ اپنی جگہ سے ہٹ گئے کہ شاید لڑائی ختم ہو گئی، اسی اثنا میں خالد بن ولید جو کہ ابھی اسلام میں داخل نہیں ہوے تھے، احد پہاڑ کی جانب سے پھر حملہ کر دیا اور یوں ستر صحابہ کرام شہید ہوے۔وہاں ہم نے فاتحہ خوانی کی اور پھر مسجد قبلتین کی زیارت کی، اس مسجد کو قبلتین اس لیے کہتے ہیں کہ یہاں نماز کے دوران حضور اکرم صلی اللہ علیہ والہ وسلم کو وحی الہی سے اس بات کا حکم دیا گیا کہ مسجد اقصی جو کہ قبلہ اول تھی، کی بجائے مکہ مکرمہ میں کعبہ شریف کی طرف منہ کرکے نماز ادا کی جائے تو آپ صلی اللہ علیہ والہ وسلم نے دوران نماز منہ کعبہ شریف کی طرف پھیر لیا، تقلید میں صحابہ نہ بھی ایسا ہی کیا۔
بس سروس والوں کے پیکج میں ایک دن کا ہوٹل کا قیام بھی تھا، چنانچہ اس کے بعد ہم ہوٹل میں چلے گئے ، چونکہ رات بھر جاگے تھے اس لیے سو گئے، گیارہ بجے جاگ کر غسل کر کے مسجد نبوی کی طرف پیدل روانہ ہوے جو کہ ہوٹل سے زیادہ دور نہیں تھی۔سخت دھوپ بھی تھی اور مسجد نبوی میں رش بھی بہت تھا، ہم مسجد کے ہال میں نہ پہنچ سکے اسی لیے مسجد کے صحن میں نماز ادا کی، بھلا ہو سعودی حکومت کے جنہوں نے انتظامات کی حد کی ہوئی ہے، صحن میں بڑی بڑی چھتریوں کی وجہ سے دھوپ کی شدت بالکل محسوس نہیں ہوتی تھی، نماز جمعہ کے بعد ہم نےروزہ رسول کی زیارت کی، اور مسجد کے اندر خاص حصہ جسے ریاض الجنہ ، یعنی جنت کا باغ کہتے ہیں، تک پہنچنے کی کوشش کی لیکن رش کی وجہ سے کامیابی نہ ہوئی۔ زیادہ دھکم پیل سے گریز کیا کیوں کہ سب لوگ وہا ں زیارت کی غرض سے ہی آئے ہوتے ہیں تو کسی بیٹھے ہوے کی اوپر سے گزرنا ، پھلانگنا اتنی اچھی بات نہیں۔ پھر عصر کی نماز پڑھنے کے بعد مسجد نبوی کے قریبی بازار میں گھومتے رہے، شام پانچ بجے کے قریب ہم واپس مسجد نبوی پہنچ گئے۔افطاری کے لیے دستر خوان بچھائے جارہے تھے، بڑی بڑی کھانے بنانے والی کمپنیاں اور ہوٹلوں والے کھانے کا انتظام کرتے ہیں اور ہر کوئی آپ کو افطاری کے لیے اپنی طرف کھینچنا چاہتا ہے۔ افطاری میں سب روزہ داروں کے لیے ایک دو پھل، کیلا اور مالٹا،منرل واٹر کی ایک چھوٹی بوتل، جوس، لسی، چاول اور مرغی، کھجور اور ایک عدد ڈبل روٹی جس میں کھجور کا گودہ بھرا ہوتا ہے دستیاب ہے۔اسکے علاوہ آب زم زم کے کولر بھی رکھے ہوتے ہیں، جونہی اذان ہوتی ہے سب لوگ روزہ افطار کرتے ہیں، پھر ۵ منٹ کے وقفے کے بعد تیزی سے دسترخوان سمیٹا جاتا ہے،اور مغرب کی نماز ادا کی جاتی ہے۔
ہم نے بھی مغرب کی نماز پڑھی، اور پھر کچھ دیر بازار میں گھومنے کے بعد مسجد میں واپس آگئے، اس کے بعد عشا کی نماز اور دس تراویح ادا کیں، بقیہ دس تراویح رات ایک بجے کے بعد پڑھی جاتی ہیں، ہماری بس نے واپسی کے لیے گیارہ بجے چلنا تھا، اسے لیے ہم دس منٹ پہلے مسجد سے نکلے اور بس تک پہنچ گئے۔میں نے مدینہ منورہ کی متبرک کھجور جسے عجوہ کھجور کہتے ہیں کی کچھ مقدار خریدی، یہ کھجور حضور اکرم صلی علیہ والہ وسلم نے بہت پسند کی۔
گیارہ بجے مدینے سے نکلے اورتین بجے کے قریب آدھے رستے میں ہم نے پھر ایک ہوٹل سے سحری کی اور فجر کی نماز کے وقت بس والوں نے ہمیں جدہ میں اتار دیا۔



About Yasir Imran

Yasir Imran is a Pakistani living in Saudi Arabia. He writes because he want to express his thoughts. It is not necessary you agree what he says, You may express your thoughts in your comments. Once reviewed and approved your comments will appear in the discussion.
This entry was posted in Pictures, Urdu and tagged , , , , , , , , , , , , , , , , , , . Bookmark the permalink.

10 Responses to رمضان میں درنبی پر حاضری

  1. فیصل says:

    ماشا اللہ۔ بہت اچھی تصاویر ہیں اور آپکی قسمت بھی بہت اچھی ہے۔

  2. Yasir Imran says:

    فیصل صاحب
    بہت شکریہ تعریف کرنے کا
    اللہ سب کو ہی اچھی قسمت عطا کرے، آمین

  3. saima yasir says:

    aoa bohat zabrdast pics i ha ap bohat lucky ha k ap waha par majud ha chahe job ki waua se ziyada din tak waha ni reh sakte lakin ap k pas ye facility to h na k ap ja sakte ha Allah apki qismat or ziyada ziyarte kare or ap ko paka muslman or sacha ashiq e Rasool S.A.W.W banye ameen suma ameen

  4. اے خدا
    کبھی یہ وقت
    ہم پہ بھی لا۔

    اللہ آپ کو اجر دے۔آمین

  5. جاوید صاحب
    اللہ آپ کو اپنے در پر حاضری کےلیے جلد بلائیں گے، بہت شکریہ

  6. ماہ صیام کی آمدمبارک

  7. shabir Ahmad says:

    Asalamualikum Yasir Sahab.
    You are the lucky because your self is on that land where all of the muslims wants to die and the website which i mention above please look it and think it because i am a social worker and work for those who need help i hope your good self aware about the fact of kashmir and i am from kashmir so in kashmir i am dealing with the drug addication and the issuse is so big in the state at present i need help for constraction a new hospital for those who involved the addication we have a ten beded hospital right now but this not enoughf to deal with the problem so hope your good self help us in this regard in website their is on line donation system to pay and one of my request is say (Aasalamualikum) to NABI MOHATARAM (SAW) from my side hope u will do that and say kashmires are in big trobule and say shabir also wants to come on your ROZAYE_ATHAR_for DEDAR permit him.
    Dear yasir pray for me and my kashmir as muslim brother.

    • Yasir Imran says:

      Asslam O Alekum
      It is nice to know about your plans and your hard-work for humanity. I must pray for you and your project and I will try to help you by any means I could.
      May Allah bless the Muslims in every part of the world and take away their pains and troubles. Thank you.
      Waslam

  8. munir ahmed says:

    Yasir bahi lahore m rahtey howy MADINA ke sair karwa de Allha ap k khus rahky or ajar day.

  9. munir ahmed says:

    Great Yasir Bahi

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s