قائدِاعظم از صوفی تبسّم


قائدِاعظم

تیرے خیال سے ہے دل شادماں ہمارا
تازہ ہے جاں ہماری دِل ہے جواں ہمارا

تیری ہی ہمّتوں سے آزاد ہم ہوئے ہیں
خوشیاں ملی ہیں ہم کو دِل شاد ہم ہوئے ہیں
تجھ سے ہی لہلہایا یہ گُلستاں ہمارا

ہم سو رہے تھے تُو نے آ کر ہمیں جگایا
پھرتے تھے ہم بھٹکتے رستہ ہمیں بتایا
تُو رہنما ہمارا ، تُو سارباں ہمارا

تیرے ہی حوصلے سے طاقت ملی ہے ہم کو
تیری ہی آبرُو سے عزّت ملی ہے ہم کو
چمکا ہے تیرے دم سے قومی نشاں ہمارا

اِس دیس میں ابھی تک چرچا ہے عام تیرا
جِس شخص کو بھی دیکھا ، لیتا ہے نام تیرا
دِل تیری یاد سے ہے اب تک جواں ہمارا

ہم جو قدم اٹھائیں آتی ہے یاد تیری
ہم جس طرف بھی جائیں آتی ہے یاد تیری
تجھ سے رواں دواں ہے یہ کارواں ہمارا

(صوفی تبسّم)

About Yasir Imran

Yasir Imran is a Pakistani living in Saudi Arabia. He writes because he want to express his thoughts. It is not necessary you agree what he says, You may express your thoughts in your comments. Once reviewed and approved your comments will appear in the discussion.
This entry was posted in Poetry, Urdu and tagged , , , , , , , , , , . Bookmark the permalink.

2 Responses to قائدِاعظم از صوفی تبسّم

  1. aisha says:

    bohut hi ala kam kia hay ap ny koshish achi hay sofi gulam tabasum ka or kalambhi dalyey, app nay jis khon apsenay say banaya hy is k lyey ap shabash k haqdar han

  2. TariqRaheel says:

    بابائے قوم جناب محمد علی جناح کا یوم پیدائش مبارک ہو

    December دسمبر Good Bye

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s