اقبال کا خواب پاکستان از صوفی تبسّم


اقبال کا خواب پاکستان

کتنا اچھا ہے کتنا پیارا ہے
اِک چمکتا ہوا ، ستارا ہے
ہم ہیں اِس کے تو یہ ہمارا ہے
جان میں اس کی جان ہے اپنی
اِس کی ہر شان ، شان ہے اپنی

یہ بڑا مُلک ہے کہ چھوٹا ہے
اُس طرح کا کہ اِس طرح کا ہے
یہ بڑی بات ہے کہ اپنا ہے
دیس میں اپنے اپنا راج تو ہے
اپنے ہاتھوں میں اپنی لاج تو ہے

کِس نے پہلے پہل یہ بات بتائی
کِس نے پہلے پہل یہ راہ دکھائی
کِس نے خوشخبری ہم کو آکے سنائی
جانتے ہو یہ کام کِس کا تھا
ڈاکٹر اقبال نام جس کا تھا

چاہتے ہو کہ تُم بھی ہو آباد
چاہتے ہو کہ تُم بھی ہو آزاد
چاہتے ہو کہ تُم بھی ہو دِلشاد
ایک دنیا نئی بسا لو تُم
ایک جنّت یہیں بنا لو تُم

یہ چمن یہ بہار اُسی کی ہے
یہ وطن یادگار اُسی کی ہے
سب کہو بار بار، اُسی کی ہے
سب کہو زندہ باد پاکستان
زندہ ، پایندہ باد پاکستان

(صوفی تبسّم)


About Yasir Imran

Yasir Imran is a Pakistani living in Saudi Arabia. He writes because he want to express his thoughts. It is not necessary you agree what he says, You may express your thoughts in your comments. Once reviewed and approved your comments will appear in the discussion.
This entry was posted in Poetry, Urdu and tagged , , , , , , , , , . Bookmark the permalink.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s