کیا انسان کا چاند پر قدم رکھنا حقیقت ہے


بیس جولائی 1969 کو امریکہ نے انسان کے چاند پر قدم رکھنے کا دعوہ کیا اور اسکا منظر دنیا بھر کے افراد کو ٹی وی سکرین کے ذریعے دکھایا گیا۔ ،امریکہ کا یہ دعوہ تھا کہ اسکا خلائی جھاز اپالو چاند پر اترا اور دو خلا بازوں نے چاند کی سطح پر اتر کر چہل قدمی کی، کچھ تصاویر بنائیں، امریکی جھنڈا چاند کی سر زمین پر گاڑا، چاند کی سطح سے پتھروں کے چند نمونے لیے اور زمین پر واپس لوٹ آئے،
خلائی اداروں کے لیے سامان بنانے والے کچھ اداروں کے ماہرین اور کچھ خلا باز اس واقعہ کی حقیقت سے انکار کرتے ہیں، ماہرین کے مطابق چاند پر خلائی گاڑی کو اتار کر واپس زمین پر لوٹ آنے کا تناسب ایک سو میں سے صرف اعشاریہ صفر صفر ۱یک سات فیصد ہے۔

A Funny Thing Happened On The Way To The Moon.

A Funny Thing Happened On The Way To The Moon.


امریکی خلائی ادارے ناثا کی فراہم کی گئی تصاویر اور مناظر کا باریک بینی سے مشاہدہ کرنے کے بعد ماہرین طبیعات اس نتیجے پر پہنچے ہیں کہ ان تصاویر میں ایسی کئی خامیاں ہیں جو یہ ثابت کرتی ہیں کہ یہ تصاویر چاند کی نہیں بلکہ زمین کے کسی حصے کی ہیں۔
مثلا چاند پر بنائی گئی تصاویر میں ستارے منظر سے غائب ہیں، حالانکہ ستاروں کا مشاہدہ ہم کائنات کی کسی بھی جگہ سے کر سکتے ہیں۔ اس کے علاوہ خلاباز نے جب چاند پر امریکی جھنڈا گاڑا تو وہ لہرانے لگا جب کہ چاند پر ہوا ہی موجود نہیں۔ ایک اور پہلو یہ کہ خلاباز کے چاند کی سطح پر قدم رکھنے سے اسکا جوتا چاند کی زمین میں دھنس گیا لیکن ایک بڑی چاند گاڑی جس کا وزن ٹنوں میں ہے،وہ چاند کی زمین میں نہیں دھنسی اور نہ اسکے گرنے سے کوئی دھماکہ ہوا۔
ایسے ہی کچھ حقائق کی بنیاد پر بین الاقوامی ماہرین کے ایک گروہ نے انسان کے چاند پر قدم رکھنے کے واقع کو گزشتہ صدی کا سب سے بڑا دھوکہ قرار دیتے ہوے کہا کہ کسی بھی انسان نے چاند پر قدم رکھا ہی نہیں۔ اس دھوکے کے تمام حقائق کو بے نقاب کرنے کے لیے سرمایہ کاروں نے پانچ لاکھ ڈالر رقم فراہم کی ہے
سوال یہ ہے کہ امریکہ کو اس دھوکے سے کیا فائدہ حاصل ہوا اور کیا چاند پر انسان کا قدم رکھنا اتنا اہم تھا کہ اس کے لیے ایک بڑی رقم خرچ کی جاتی۔ تجزیہ نگاروں کے مطابق جب امریکہ نے اپنے راکٹ کا چاند پر اترنے کا دعوہ کیا وہ سرد جنگ کا زمانہ تھا اور روس نے 1956 میں اپنا ایک راکٹ خلا میں بھیج کر امریکہ پر اپنی برتری قائم کر لی تھی، اور امریکی دفاعی اداروں کو یہ خطرہ لاحق ہو گیا تھا کہ روس خلا سے امریکہ پر ایٹمی حملہ کر سکتا ہے، ماہرین کے مطابق روس کی اس برتری کو توڑنے اور سرد جنگ جیتنے کے لیے کچھ ایسا کیا جانا ضروری ہے جو روسی اقدام سے بہت بڑھ کر ہو۔ چنانچہ امریکہ نے چاند پر انسانی قدم رکھنے کا جھوٹا مشن ترتیب دیا اور ایک راکٹ خلا میں چھوڑ دیا جو کچھ دن زمین کے گرد چکر لگاتا رہا اسی اثنا میں زمین پر مصنوعی سیٹ تیار کر کے خلا بازوں کے چاند پر قدم رکھنے کی تصاویر بنائیں اور اسے پوری دنیا کے سامنے پیش کر دیا۔
اس موضوع پر اور تحقیق آپ کو اس ویب سائٹ سے مل جائے گی۔ یہ تحقیق کرنے والے کہتے ہیں کہ اس موضوع پر مختلف رائے ہیں اس لیے ہم کوئ دعوہ نہیں کر رہے، مناظر اور حقائق کو دیکھنے کے بعد آپ سچ کا خود فیصلہ کریں۔ اس ویڈیو میں بہت سارے دلائل اور حقائق بیان کیے گئے ہیں۔


Moon Landing and American Flag

Moon Landing and American Flag


About Yasir Imran

Yasir Imran is a Pakistani living in Saudi Arabia. He writes because he want to express his thoughts. It is not necessary you agree what he says, You may express your thoughts in your comments. Once reviewed and approved your comments will appear in the discussion.
This entry was posted in Features, Urdu and tagged , , , , , , , , , , , , , . Bookmark the permalink.

8 Responses to کیا انسان کا چاند پر قدم رکھنا حقیقت ہے

  1. Jafar says:

    پڑھا تو تھا جی میں نے بھی کسی جگہ کہ سٹینلے کیوبرک کی ہدایتکاری میں یہ فلم فلمائی گئی تھی
    باقی جی کیا فرق پڑتا ہے اگر چلے بھی گئے ہوں یا نہ بھی گئے ہوں

  2. ہاہاہا۔ یار کم از کم ہم لوگ جو ایم بیز بینڈ وڈتھ استعمال کرتے ہیں۔ روزانہ سیٹیلائٹ کمیونیکشن کے سیکڑوں معجزے استعمال کرتے ہیں ابھی تک اسی شک میں پڑے ہیں؟ اب تو بھارت بھی پہنچ گیا ہے بھائی۔۔ چھوڑو ان کائنسپریسی تھیوریز کو اور اس بات پر غور کرتے ہیں کہ ہم لوگ کسطرح پہنچیں؟ یار لوگ تو راکٹ چرانے کی بات کرتے ہیں لیکن ہمت کریں تو بنا سکتے ہیں۔

  3. تصاویر جو شائع کی گئی تھیں ان کی بنا پر پورا سفر مشکوک ہو جاتا ہے ۔ اب مجھے سب کچھ تو یاد نہیں لیکن آپ نے جو لکھا ہے اس کے علاوہ یہ بھي یاد ہے کہ ایک تصویر میں کسی چیز کا سایہ تھا اور کسی کا نہیں ۔ ایک اور تصویر میں روشنی جس طرف سے آ رہی تھی سایہ بھی اُسی سمت تھا

  4. Yasir Imran says:

    افتحار صاحب، ہاں واقعی کچھ اس طرح کے حقائق بھی ہیں، جو لوگ مکمل جاننا چاہتے ہیں وا اوپر دی گئی ویب سائٹس سے انگریزی میں مواد دیکھ سکتے ہیں۔ اس میں دو عدد ویڈیوز بھی موجود ہیں۔ اور ان میں بتائے گئے فیکٹس دیکھنے اور سمجھنے سے تعلق رکھتے ہیں۔

    راشد بھائی، واقعی ٹیکنالوجی بہت حد تک آگے جا چکی ہے، اور اس بات سے انکار ممکن نہیں کہ امریکہ ٹیکنالوجی میں ہم سے بہت آگے ہے، لیکن چاند پر انسان کا پہنچنا ایک ڈرامہ ہے۔ ہاں چاند پر کیسے پہنچا جائے اس بات پر ضرور غور کرنا چاہیے، ہو سکتا ہے ہم امریکہ سے بازی لے جائیں

    جعفر صاحب
    فرق تو واقعی نہیں پڑتا، صرف جنرل نالج کے لیے یہ موضوع چھیڑا

  5. نیشنل جیوگرافک یا غالبا ہسٹری چینل نے ان تھوریز کے ماننے والوں اور نہ ماننے والوں کے تعاون سے ایک پروگرام بنایا تھا اور دونوں‌ طرف کے لوگوں کو اپنا نقطہ نظر بیان کرنے کا موقع فراہم کیا۔ تجربات کے ذریعے چاند پر پہنچنے والوں نے اپنے موقف کو ثابت کیا تھا اور باقی تھیوریز “میں نہ مانوں‌تک محدود ہوگئی تھیں”۔ ایک اچھی دستاویزی فلم تھی اگر دستیاب ہوتو دیکھے گا شاید کچھ سوالات کے جواب مل سکیں۔

  6. Yasir Imran says:

    اگر آپ کے پاس ہو تو مجھے ربط دے دیجیے گا، کیوں کہ ہمارے ٹی وی میں تو نیشنل جیوگرافک نہیں آتا۔

  7. This one is from the series MythBuster from Discovery
    http://dsc.discovery.com/videos/mythbusters-moon-hoax/

    Then if you search History and Discovery’s video archive for Moon Hoax or Moon Landing Conspiracies you will get valuable information based on the claim of both side. Apart from what one believes the discussion itself is very interesting. Hope you will like it.

  8. Yasir Imran says:

    Thank you rashid saheb
    I will check that.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s