پرویز مشرف کے جرائم کی فہرست


پرویز مشرف نے پاکستان پر ایک لمبے عرصے تک آمریت قائم رکھی، اور ملک کو ناقابل تلافی نقصان پہنچایا، نیچے میں نے مشرف کے کچھ جرائم کی ایک فہرست تحریر کی ہے، جو کہ مشرف کے جرائم کا کچھ حصہ ہے، اگر مشرف کے تمام جرائم لکھے جائیں تو میرا نہیں خیال کہ اس کے لیے یہ بلاگ کافی ہو گا۔

  • ۱۲ اکتوبر ۱۹۹۹ کو محض اپنی نوکری بچانے کی خاطر طیارہ ہائی جیکنگ کا ڈراما رچا کر ملک میں مارشل لا لگایا، جمہوری حکومت کو توڑ دیا، عوامی ووٹ سے منتخب ہوے وزیر اعظم کو قید میں ڈالا، آئین کو توڑا اورقوم سے جلد نئی جمہوری حکومت قائم کرنے کا جھوٹا وعدہ کر کے اپنی غیر آئنی حکومت قائم کرلی۔
  • ۱۹۹۹ میں ہی سپریم کورٹ کے ان ججوں کو جنہوں نے مشرف کی غیر آئنی حکومت کی توثیق کرنے سے انکار کر دیا کو غیر قانونی طریقے سے نوکری سے فارغ کر دیا اور اپنی پسند کے ججوں سے نئے پی سی او کے تحت حلف اٹھوایا۔

  • اس وقت کے وزیر اعظم جو کہ ایک پاکستانی شہری بھی تھے کو ڈرا دھمکا کرملک چھوڑنے کے معائدے پر دستخط کرائے انہیں ملک بدر کیا اور ان سے آزاد پاکستانی شہری ہونے کا حق بھی چھین لیا۔ بعد ازاں انہیں ان کے والد کی وفات پر ملک آنے اور اپنے والد کا آخری دیدار کرنے سے بھی روک دیا۔
  • احتساب کا ڈرامہ رچا کرسیاسی مخالفین کو جیلوں میں بجھوا دیا اور جنہوں نے مشرف کی غیر قانونی حکومت کا ساتھ دینے کا وعدہ کیا ان کی کرپشن کے تمام کیسوں کو پس پشت ڈال دیا، اس طرح پاکستان دنیا کے کرپٹ ترین ممالک کی صف میں آ کھڑا ہوا۔
  • ۱۱ ستمبر کو امریکہ میں دہشت گردی کے واقعات کے بعد ملک کو امریکہ کی نام نہاد دہشت گردی کے خلاف جنگ جو کہ ایک مسلمان مکائو جنگ بھی تھی میں جھونک دیا،دوسرے لفظوں میں پاکستان کی خود مختاری کا سودا کر دیا۔
  • افغانستان پر امریکی فوج کے بیہمانہ حملے کو ممکن بنانے کے لیے تمام سہولتیں مہیا کیں، اور کفر کا ساتھ دیتے ہوے لاکھوں معصوم مسلمان بھائیوں ، بچوں اور عورتوں کے خون سے پاکستان کے ہاتھ رنگے اور افغانی عوام میں پاکستان کے خلاف نفرت پیدا کرنے کا سبب پیدا کیا۔
  • جہاد کو دہشت گردی سے گڈ مڈ کر دیا، سب سے پہلے پاکستان کا نعرہ لگا کر مسلمان کی ایک قوم کی حیثیت کے تشخص کو ختم کرنے کی سعی کی، پس پردہ اس نعرے کا مقصد امریکی مفادات کا تحفظ تھا۔ تا کہ مسلمان اپنے دینی فرائض کو پس پشت ڈال دیں۔
  • امریکی ڈالروں کی خاطر سینکڑوں پاکستان نوجوانوں، علما اور دین کے نگہبانوں کو امریکہ کے ہاتھ بیچ دیا۔ کچھ کو اپنے ہی ملک میں ایسی تنگ و تاریک کوٹھڑیوں میں ڈلوا دیا جہاں سے وہ اپنے پیاروں کی خوشبو تک کو ترس گئے۔
  • قوم کی بیٹی عافیہ صدیقی کو امریکی درندوں کے ہاتھ بیچ دیا تا کہ وہ اسکی عزت تار تار کر سکیں، اس کے تین معصوم بچوں کو بھی اسی آگ میں جھونک دیا۔
  • امریکی آقائوں کو خوش کرنے کے لیے پاکستان کی درسی کتب سے قرآنی آیات کم کروائی، جہاد کے متعلق آیات کو سیلبس سے نکلوا دیا۔
  • امریکی سی آئی اے اور ایف بی آئی کو پاکستان کے اندر امریکی اور یہودی مفادات کے لیے کام کرنے کی پوری آزادی اور سہولیات فراہم کیں۔
  • امریکہ کو نہ صرف پاکستان میں ہوائی اڈے فراہم کیے، بلکہ ڈرون حملوں پر بھی مکمل خاموشی اختیار کی، یوں پاکستان فوج جو دنیا کی چند بڑی افواج میں سے ایک ہے اور عالم اسلام کی سب سے بڑی فوج ہے کوکفار کے حملوں کے جواب میں ہاتھ پے ہاتھ رکھ کر خاموشی اختیار کرنے اور بے غیرت بننے پر مجبور کیا۔
  • ۲۰۰۴ میں باجوڑ میں دینی مدرسے پرامریکی میزائل حملے میں ۷۰ سے زائد معصوم طلبا شہید ہوے، مشرف نے اسے کاروائی کو پاک فوج کے کھاتے میں ڈال دیا، جس کے بعد پاکستان کی تاریخ میں پہلی بارپاک فوج پر دہشت گردی کا حملہ ہوا، یہ حملہ بلاشبہ باجوڑ حملے کو جواب میں تھا ،یہ جوابی حملے ابھی تک جاری ہیں اور پاکستان کے دشمن ان حملوں کا فائدہ اٹھا رہے ہیں، عوام کو گمراہ کر کے انہیں اسلحہ مہیا کر کے اپنے مقاصد کے لیے استعمال کر رہے ہیں۔
  • مشرف کی امریکہ نواز پالیسوں کے بعد سے پاکستان کے بڑے بڑے شہروں میں خود کش دھماکوں کا سلسلہ شروع ہوا، یہ حملے پاکستانی کر رہے ہیں، طالبان کر رہے ہیں یا بھارت کروا رہا ہے اس بات پر مختلف آرا ہیں۔
  • لال مسجد پر پاک فوج کے کمانڈوز کے ذریعے ملٹری آپریشن کروایا، اس واقعے کے دوران بلا دریغ جھوٹ بول کر پاکستانی عوام کو گمراہ کیا، معصوم بچوں اور پاکستانی بیٹیوں کا قتل کروایا، پاک فوج کے خلاف عوامی نفرت پیدا کی۔ اس حملے کے جواب میں خود کش حملوں کا سلسلہ اور تیز ہوا۔
  • عوام کو روشن خیالی کا سبق دے کر ملک میں عریانی، فحاشی، ناچ گانے اور مغرب پسندی کو فروغ دیا۔ ہماری دینی، سماجی، اخلاقی اور ثقافتی اقدار کو نقصان پہنچایا، آج ملک میں یہ حالت ہے کے اگر کوئی داڑھی رکھ لیتا ہے یا دین کے بات کرتا ہے تو اسے انتہا پسند سمجھا جاتا ہے۔
  • بلوچ سردار اکبر بگٹی کو مروا کر بلوچستان میں تشدد کی لہر کو ہوا دی، بلوچستان میں نفرت کا ایسا بیج بویا کہ آج عوام سڑکوں پر نکل کر اپنے حقوق کی جنگ لڑ رہے ہیں۔
  • ۹ مارچ ۲۰۰۷ کو پاکستانی چیف جسٹس کو اپنے مفادات کے خلاف سمجھتے ہوے زبردستی معطل کیا، حکم عدولی پر ان کے انسانی حقوق تک ختم کر دیے ، ملک میں قانون کی حمایت کرنے والے افراد کو جیلوں میں ڈلوایا، انہیں پولیس سے پٹوایا۔ عورتوں کی سر عام بے حرمتی کروائی۔
  • بار بار وردی اتارنے کا جھوٹ بولا۔
  • ۱۲ مئی کو چیف جسٹس کے دورہ کراچی کو ناکام بنانے کے لیے اپنی حریف جماعت سے وہاں قتل عام کروایا، پھر اسی شام اسلام آباد میں ایک کرائے کے جلسے میں مکہ لہراتے ہوے کہا کہ کراچی میں اس کے مخالفین نے مشرف کی طاقت دیکھ لی ہے۔
  • اپنے اقتدار کے طول دینے کے لیے اور لوٹوں کو اپنی حمایت میں کھڑا کرنے کے لیے این آر اور جیسا قانون بنایا جس میں اربوں کھربوں کی کرپشن اور لوٹ مار معاف کی گئی۔
  • بلوچستان میں پاکستانی ملکیت دنیاکی بڑی ترین تانبے اور سونے کی کان جس کی مالیت ۶۵ ارب ڈالر سے بھی زیادہ تھی، کو صرف ۲۱ ارب ڈالر میں آسٹریلیا کو بیچ دیا، یہ ۲۱ ارب ڈالر کہاں ہیں اور کہاں استعمال ہوے ان کا نام و نشان تک نہیں ملا۔
  • ایک ایسا شخص جس کے پاس پاکستان کا شناختی کارڈ بھی نہیں تھا، کو امیریکہ کی خوشنودی کے لیے ملک کا وزیر اعظم بنایا،
  • ملک کی بڑی بڑی املاک جن میں کراچی الیکٹرک سٹی کارپوریشن، پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن اتھارٹی، حبیب بنک شامل ہیں کو غیر ملکی کمپنیوں کے ہاتھ سستے داموں بیچ دیا، ایسی کمپنیاں جو اتنے بڑے بڑے اداروں کو چلانے کا کوئی تجربہ نہیں رکھتی تھیں۔ جس کی وجہ سے آج کراچی اندھیروں میں ڈوبا ہوا ہے۔
  • پاکستان سٹیل مل کو کوڑیوں کے بھائو بیچنے کی کوشش کی جو اس وقت سپریم کورٹ نے مداخلت کرکے رکوا دی۔
  • ۳ نومبر۲۰۰۷ کو دوسری مرتبہ آئین کو توڑا، اپنی ذات کے لیے ملک میں غیر قانون ایمرجنسی لگائی، جو کہ بندوق کی نوک پر لگائی گئی، اور اس میں بھی ایسے ایسے غیر قانونی اقدامات کیے جو ایمرجنسی سے ماورا تھے، ایک بار پھر پی سی او ججوں کو بھرتی کیا، عدل و انصاف کرنے والے ججوں کو گھر بجوا دیا، بیشتر کو قید میں ڈالا، آزاد میڈیا پر پابندیاں لگائی، ملکی وسائل اور دولت کا بے دریغ استعمال کیا

یہ تحریر  معروف صحافی اور کالم نگار جناب انصار عباسی کی تحریر میں کانٹ چھانٹ کے بعد تحریر کی گئی۔ میرے خیال میں مشرف پاکستان کا سب سے بڑا مجرم ہے جس نے پاکستان کو ابھرتی ہوئی واحد اسلامی ایٹمی طاقت، ایک جمہوری اور ترقی پذیر ملک سے تباہی اور بربادی کے دھانے پر لا کھڑا کیا ہے، جہاں دہشت گردی کا دور دورا ہے، جہاں اسلام دشمنوں کے مقاصد اور عزائم پھل پھول رہے ہیں، جہاں اشیائے خوردو نوش، آٹا ، پانی بجلی، سبزیاں عوام کی پہنچ سے باہر ہو چکی ہیں۔ جہاں کرپشن کا دور دورا ہے، جہاں لاقانونیت اپنے عروج پر ہے۔ اگر مشرف ۱۹۹۹ کو ایک غلط فیصلہ نہ کرتا اور ملک میں ایک جمہوری حکومت پھلتی پھولتی تو آج پاکستان اس حال میں نہ ہوتا بلکہ اسے سے ہزاروں درجے بہتر ہوتا،

بلکہ میں تو یہ کہوں گا اگر مشرف پیدا ہی نہ ہوتا تو پاکستان کی کتنی خوش قسمتی ہوتی، اس گندے انسان کا گندا وجود پاکستان کی مقدس سر زمین پر نہ پڑتا تو کتنا اچھا ہوتا، مشرف کے روپ میں پاکستان پر شیطان کی حکومت قائم رہی، جس نے پاکستان کے انگ انگ کو زخمی کر دیا۔


About Yasir Imran

Yasir Imran is a Pakistani living in Saudi Arabia. He writes because he want to express his thoughts. It is not necessary you agree what he says, You may express your thoughts in your comments. Once reviewed and approved your comments will appear in the discussion.
This entry was posted in Features, Urdu and tagged , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , . Bookmark the permalink.

16 Responses to پرویز مشرف کے جرائم کی فہرست

  1. Jawad says:

    WHy did u remove my comment? If you have guts, then you should have replied on that.

  2. Yasir Imran says:

    Mr. Jawad

    I can’not allow your fazul comments over here. You are asking me for reply. My article is already a big list of facts, I don’t need to say more on that. If you consider this matter truely you will find musharaf a big criminal who give so much pain to all Pakistani people. Or still you think Nawaz Sharif has paid them all 160 million people ?

  3. Jawad says:

    You are talking about media not representing correct facts and figure…

  4. Yasir Imran says:

    Mr. Jawad, please provide the correct facts and figures so that we all people can know the truth.
    By the way how do you know the truth, what are your sources of information?
    anything else than media ?
    Did you work as musharaf secrtery as you know all the real facts or you are an angle living on musharaf’s shouldr?

  5. Jawad says:

    If you have courage, then you should not have truncated my last message. You should stop blogging. That’s all I have to say.

  6. Yasir Imran says:

    You don’t worry about my courage. You reply my question. being a blog author I have right to approve or delete any comment. It is not your headache, If you are musharaf fan than defend him.

  7. Yasir Imran says:

    Mr. Jawad

    No lawyer is ready to handle the Musharaf’s case in supreme court. Musharaf’s best friend Malik Qiyyum refused to take his case. because lawyer’s know that Musharaf’s un-constitutional action cannot be defended. Even you don’t have any points to present here to us.

    You guyz can simply talk whatever you want but no one will come forward to defend mushi, I know that. I wish musharaf get such a punishment from supreme court that no general in fture think of destroying democracy.

  8. Jawad says:

    I think everyone knows how supreme court is operating these days. Bless those who compained for them, and condemn previous rulers. I dont have any further comments to your twisted thoughts. Consider this as my last message. I pray we had better intellect as a nation.

  9. Yasir Imran says:

    Mr. Jawad, simply you say that you don’t have answers of Musharaf’s eveil. What he did to ruin Pakistan. I don’t feel you are a Pakistani, you are somebody outside. Because if you are a true Pakistani you don’t speak for Musharaf.

    • Faheem says:

      I wonder how cant a Pakistani see Mushi s crimes against muslims in general and Pakistan in particular? But there is no dearth of fools like Jawad in Pakistan being kept at lowest levels of education and information by kings like mushi which again we have a long record.

      Having said that, zardari is no better than Mushi as he was an accoplice with America and Mushi in killing BB, accordind to my best knowlege and analysis, and replacing the formers team of killers and rogues with the new killere and rogues like rehman malik, pervez ashraf and baber awan. besides, trying to protect these at the cost of judiciary.

  10. محترم یاسر عمران مرزا صاحب!

    اسمیں کوئی شک نہیں کہ مشرف پہ بہت لمبی فرد جرم عاد کی جانی چائیے تانکہ اپنے آپ کو کانڈو جرنیل کہلوانے بزدل کو ہر دن ، ہر جگہ کوئی گواہی ۔ کوئی شہادت، یا مقدمہ بھگتنا پڑے اور سزا سب سے آخر میں ، جب یہ بزدل اور جرنیل اسی دنیا میں سب سزائیں بھگت چکا ہو تو تب اسے کے سارے فیصلوں کو اسے یکے بعد دیگرے سنایا جائے اور مکمل اور شفاف عادالتی کاروائی کے بعد سے عدالت سے سخت سے سخت سزائیں سنوائی جائیں۔ تانکہ زندگی کے آخری دن یہ رسواکن گزارے ۔

    بعد از مرگ بھی زلت جاری کا کچھ اسطرح کا بندوبست ہونا چاھئیے کہ ایسے ننگ ملت ، ننگ وطن۔، غدار وطن اور قوم فروش ایک عبرتناک مثال بن جائے اور آئیندہ کے لئیے کسی طالع آزاما کو یہ جرائت نہ پڑے کہ وہ پاکستانی قوم کو یرغمال بنا سکے اور پوری قوم کا وقار اور پوری ریاست کا اعتبار، اور قوم کی بیٹیوں اور بیٹوں کا کسی کے ساتھ سودا نہ کر سکے۔
    یہ سب اسلئیے بھی ضروری ہے کہ مظلوم اور لاچار بے بس لوگ جنکہ خالی آنکھیں اتنے سالوں سے آسمان کی وسعتوں میں اپنی طلومیت پہ خدا کے انصاف کو ڈھونڈتی رہی ہے۔ جن کا خدا پہ قین متنزل ہورہا تھا ۔ وہ مشرف کا عبرتناک حشر دیکھیں اور ان کا خدا پہ یقین دوبارہ سے بحال ہو کہ خدا کے ہاں سرف ایک خاص حد تک ہی چھوٹ ہے اور جب خدا کسی کی رسی دراز کرتا ہے تو ایک ہی جھٹکے میں کینھچ بھی لیتا ہے۔

    جواد صاحب کی خدمت میں گزارش میں صرف اتنا سا عرض کرنا مقصود ہے۔ کہ آنکھوں سے تعصب کی پٹی اتاریں ۔ کہ افتخار محمد چوہدری نے جس دن باوردی جرنیلوں کو یہ الفاظ کہے تھے کہ میں آپ کے الزامات کو تسلیم نہ کرتے ہوئے چیف جسٹس کے منصب سے استعفٰی نہیں دونگا ۔ مجھے اپنے اللہ پہ بھروسہ ہے۔ مزید جب وہ کورٹ جانے لگے تو انہیں مشرف کے حکم پہ جس گھٹیا طریقے سے روکنے کی کوشش کی گئی ، بال کھینچے گئے انھہیں اور باقی ججز کو نظر بند کیا گیا ۔ اگر چیف جسٹس افتخار چوہدری کی جگہ پہ مشرف جیسا جری جرنیل ہوتا تو پہلے ہی حکم پہ بلکہ فون کال پہ ھی اٹھ کر سیلوٹ مار کر ساری عمر حاکموں کے تلوے چاٹتا ۔ بعین اسی طرح جس طرح مشرف نے امریکیوں کی صرف ایک کال پہ پورا پاکستان طشتری میں رکھ کر پیش کر دیا تھا۔

  11. Yasir Imran says:

    جاوید صاحب،
    بہت شکریہ آپ نے اتنی تفصیل سے رائے دی، مشرف کے متعلق یہ تمام باتیں حقائق پہ مبنی ہیں، مشرف وہ شخص ہے جس نے صرف اپنی ذات،بچانے کے لیے، اپنی نوکری، اور آن بان قائم رکھنے کے لیے بار بار ملک کے ساتھ وہ کچھ کیا جو وہ کر سکتا تھا، ہر غیر قانونی کام کیا صرف اپنے مفاد کے لیے، کارگل آپریشن کے حقائق چھپائے اور پھر اپنی عزت رکھنے کے لیے جمہوری حکومت کو توڑ دیا، عوام سے جھوٹ بولا، سیاست دانوں کو تمام مراعات دیں، کرپٹ لوگوں کو صرف اپنی حمایت کے لیے تمام سہولیات فراہم کیں.

    ملکی وسائل کوڑیوں کے بھائو فروخت کیے، بے گناھوں اور معصوموں کے خون سے ہاتھ رنگے.میرے بڑے بھائی نے مشرف کو مداری کا خطاب دے رکھا ہے، ان کا کہنا ہے کہ مشرف عوام کو بندر سمجھتا ہے، خود ڈگڈگی بجاتا ہے اور عوام کو فریب دے کر اسی سمت موڑ لیتا ہے جدھر خود چاہتا ہے۔کیوں کہ بہت سارے ایسے مسائل ہیں جن مین مشرف کی پالیسی کبھی ایک سمت چلی اور کبھی اس کے بالکل برعکس۔کبھی عوام کو ایک بات بتائی اور سب کو اسی طرف موڑ دیا، پھر دوسری بات بتائی اور اسکی مخالف سمت موڑ دیا۔

  12. مشرف کے دور سے پاکستان کے ساتھ سابقہ آمروں اور سول ڈکٹیٹروں کی تمام خباثتوں کے ساتھ ساتھ مشرف نے پاکستان کے بدنصیب عوام کو بے یقینی کا ؑزاب بھی عطا کیا جو تاحال جاری ہے۔ ایک وزیر جو کہ پاکستان میں وفاق کے پانی بجلی کی وزارت کے ذمہ دار ہیں۔ فرماتے ہیں کہ دسمبر تک پاکستان میں بجلی بجلی کر دیں گے۔ ساتھ ہی دوسرے وفاقی وزیر کا بیان آجاتا ہے کہ اگر آج ڈیم بنانے شروع کئیے جائیں تو اگلے چھ سال سے پہلے ان سے بجلی پیدا کرنا تکنیکی بنیادوں پہ ممکن نہیں۔کرئے کے پاور پلانٹس بھی چھ ماہ سے ایک سال تک بجلی مہیا کرنا شروع کریں گے ۔ ۔زید فرماتے ہیں کہ پاکستان کو اگلے تین سال تک (تکنیکی بنیادوں وجوہات کی وجہ سے ہر صورت میں ) کم از کم تین سال تک لوڈ شیدنگ کا مسئلہ درپیش رہے گا۔

    جبکہ غیر جانبدار ماہرین یہ پشین گوئی کرتے ہیں کہ اگر حکومت نے مشکل اور تلخ حالات کا سامنا کرتے ہئے نئے ڈیم شروع نہ کئیے تو اگلے کچھ سالوں میں پاکستان خدانخواستہ بنجر ہونا شروع ہوجائے گا ۔ ھندؤستان کا ہمارے بڑے دریاؤں کا پانی روکنے سے زیر زمین پانی بھی کم ہوتے ہوئے ختم ہوجائیگا اور پانی کی قلت کی وجہ سے بڑی بڑی آبادیاں نقل مکانی کرنے پہ مجبور ہوں گی۔ مسائل کا وہ طوفان جنم لے گا کہ جس کا تب حل ممکن نہیں تو بہت مشکل ہو گا۔
    مگر مشرف کی پالیسیوں کو جوں کا توں جاری رکھنے والی ہماری ہر دلعزیز حکومت اور تمام اختیارات کے مالک زرداری اسے کوئی خاص مسئلہ سمجھنے کو تیار نہیں اور امریکہ شاباشی جس کی بنیاد مشرف نے رکھی وہی اس حکموت کی پالیسی ہے۔

    کبھی قوم کو سندیسہ دیا جاتا ہے کہ طالبان سے معادے کر رہے ہیں اور امن ہوگیا ہے ، ساتھ ہی حکومتی عہدیران کے بیان آجاتے ہیں کہ طالبان کو مارگلہ کی پہاڑیوں سے آگے نہیں بڑھنے دیا جائے گا۔ طالبان کسی صورت میں بھی اسلام آباد پہ قبضہ نہیں کر سکتے۔ طالبان کو اسلام آباد پہ قبضہ نہیں کرنے دیا جائے گا ۔ کچھ عرصے بعد حکومت کے بیان آتے ہیں کہ طالبان کے صفایا کرنے تک آپریشن جارے رہے گا۔ اور سوات آپریشن شروع کر دیا جاتا ہے۔ کبھی صوفی محمد کو سرکاری مہمان اور اعلٰی شخصیت کے طور پہ حفظ و مراتب کا خیال رکھا جاتا ہے کبھی صوفی محمد ایہل خانہ سمیت پھر سے گرفتار بلا کردیا جاتا ہے ۔ احکومت کے ایک سو اسی درجے کے زاویے سے گھومتے ہوئے یہ تمام بیانات اور کاروائیوں میں سالوں یا عشروں کا فرق نہیں بلکہ یہ تمام معمالات صرف چند مہینوں بلکہ بعض تو کچھ ھفتوں پہ محیط ہیں۔

    کچھ ایسی صورتحال بلوچستان کے ساتھ بھی روا رکھی ہے ۔

    یہ بے یقنی کسی قسم کی رائے عامہ ہی نہیں بننے دے پارہی ۔ عام آدمی تو کجا اچھے خاصے صاحب علم اور دانشور الجھے ہوئے اور باہم دست و گریباں نظر آتے ہیں۔

    میری ذاتی رائے میں بے یقینی کسی جزبے اور کچھ کر گزرنے کے لئیے کسی بھی منصوبے یا سوچ کی موت ہوتی ہے اور یہ بے یقنینی کو امریکہ سے مشرف دور میں بطور پالیسی پاکستان پہ مسلط کیا گیا اور موجودہ حکومت کو بھی یہی پالیسی اپنانے کا مشورہ بلکہ دباؤ ہے ۔ کہ عوام بے یقینی کا شکار اور ہر وقت الجھے رہیں ۔ ایک کنفوژن ہے جو یہاں سے وہاں تک طاری ہے۔ تاکہ پاکستانی عوام بے یقینی کا شکار ہوکر بہ حثیت پاکستانی قوم اپنا اعتماد کھو بیٹھیں اور انھیں موم کی ناک کی طرح جدہر چاہا ادہر موڑ دیا جائے۔

    ااس بے یقنینی کا اؤل اول تجربہ مشرف کے دور سے شروع کیا گیا۔ مشرف نے حقوق نسواں نامی بل ۔ امریکہ میں عالمی یہودی کانگرس سے ان کے مہمان کی حثیت سے مشرف کا خطاب۔ کالا باغ ڈیم (جو پاکستان کی ضروت ہے۔ مگر اس کو صوبوں کو اعتماد میں لئیے بغیر محض انتشار پھیلانے کے لئیے) کالا باغ ڈیم کا شوشہ اور اسطرح کی بہت سی باتیں ہیں جو مشرف نے امریکن پالیسی سازوں کی مشاورت سے یکے بعد دیگرے پاکستان میں انتشار پھیلانے کے لئے کیں۔ ابھی ایک مسئلہ ٹھنڈا نہیں ہوتا تھا موصوف دوسرا چھیڑ دیتے ۔

    اس کی ابتداء بھی مشرف کے کھاتے میں لکھی جانی چاھئیے۔

  13. Yasir Imran says:

    جاوید صاحب بہت لمبی تحریر لکھی آپ نے، بے شک مشرف کا نام پاکستانی تاریخ کے سیاہ ترین ناموں میں سے ایک ہو گا۔

  14. addresses3 says:

    Yazidi Mirzai Musharraf
    Musharraf & Hindu MQM should be put on trial
    _________________________________________________

    http://www.HinduMQM.wordpress.com

    In Germany, we call Musharraf as, Yazidi Mirzai because he lived like a Yazid of the modern times and he also favoured many Mirzais & gave them important positions in the government. Yazidi Mirzai Musharraf is also directly responsible for killed thousands of small children in Lal Masjid for the sake of pleasing Micky Mouse America, which is the biggest terrorist of the world.

    There is no doubt about the fact that Yazidi Mirzai Musharraf is a terrorist and he should immediately be put on trial. Furthermore, MQM terrorists should also be prosecuted for their millions of crimes in Sindh.

    Sultan Salahuddin Ayyubi
    Germany

    http://www.HinduMQM.wordpress.com
    http://www.BoycottIndia.wordpress.com
    http://www.HinduTERRORISMinPakistan.wordpress.com
    http://www.Tibb-i-Nabvi.wordpress.com
    http://www.IslamicHeroes.wordpress.com

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s