اِک زرداری کو دیکھا تو ایسا لگا


کل ایک ایس ایم ایس آیا زرداری نامہ پڑھ کے بہت ہنسی آئی

اِک زرداری کو دیکھا تو ایسا لگا ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔
جیسے خانہ خراب ۔ ۔ ۔
جیسے ٹوٹل عذاب ۔ ۔ ۔
جیسے عادی فقیر ۔ ۔ ۔
جیسے مردہ ضمیر ۔ ۔ ۔
جیسے ناسور ہو کوئی رستا ہوا ۔ ۔ ۔
اِک زرداری کو ۔ ۔ ۔
جیسے بجلی کی تار ۔ ۔ ۔


جیسے خنجر کی دھار ۔ ۔ ۔
جیسے دوزخ کی آگ ۔ ۔ ۔
جیسے زہریلا ناگ ۔ ۔ ۔
جیسے کتّے پہ ہو کوّا بیٹھا ہوا ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔
اِک زرداری کو دیکھا تو ایسا لگا ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔

جیسے گرمی کی دھوپ ۔ ۔ ۔
جیسے شیطان کا روپ ۔ ۔ ۔
جیسے بے وردی ڈکیت ۔ ۔ ۔
جیسے مولوی کا پیٹ ۔ ۔ ۔
جیسے ڈاکو کوئی گن دکھاتا ہوا ۔ ۔ ۔
اِک زرداری کو دیکھا تو ایسا لگا ۔ ۔ ۔۔ ۔ ۔

ایک اور ۔ ۔ ۔

با ادب
با ملاحظہ ہوشیار
بے غیرتِ اعظم
بادشاہِ فاروق نائیکاں
ذلیلُ الملک
شہنشاہِ جُوا
سردارِ خرابی
آصف زرداری
زبردستی آ رہے ہیں

شب کے بلاگ سے شیر کیا


About Yasir Imran

Yasir Imran is a Pakistani living in Saudi Arabia. He writes because he want to express his thoughts. It is not necessary you agree what he says, You may express your thoughts in your comments. Once reviewed and approved your comments will appear in the discussion.
This entry was posted in Poetry and tagged , , , , , , . Bookmark the permalink.

2 Responses to اِک زرداری کو دیکھا تو ایسا لگا

  1. Sobia Atif says:

    ha ha ha
    zardari per bohat se sms aa chuke hain.
    musraf ka record tor dya hai

  2. janoo says:

    mery nazdek izzat or be izzati aak bat ha,awam jitni galiya da mujha achi lagti ha,jari rahiya.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s