شاہ مدینہ صلی اللہ علیہ والہ وسلم


شاہ مدینہ (ص) شاہ مدینہ (ص)۔
یثرب کے والی
سارے نبی تیرے در کے سوالی
شاہ مدینہ (ص) شاہ مدینہ (ص)۔

جلوے ہیں سارے تیرے ہی دم سے
آباد عالم تیرے کرم سے
باقی ہر اک شہ نقش خیالی
سارے نبی تیرے در کے سوالی
شاہ مدینہ (ص) شاہ مدینہ (ص)۔ۖ

تیرے لئے ہی دنیا بنی ہے
نیلے فلک کی چادر تنی ہے
تو اگر نہ ہوتا دنیا تھی خالی
سارے نبی تیرے در کے سوالی
شاہ مدینہ (ص) شاہ مدینہ (ص)۔

ۖ
تو نے جہاں کی محفل سجائی
تاریکیوں میں شمع جلائی
ہر سمت چھائی ،رات کالی
سارے نبی تیرے در کے سوالی
شاہ مدینہ (ص) شاہ مدینہ (ص)۔

قدموں میں تیرے عرش بریں ہے
تجھ سا جہاں میں کوئی نہیں ہے
کاندھے پہ تیرے کملی ہے کالی
سارے نبی تیرے در کے سوالی
شاہ مدینہ (ص) شاہ مدینہ (ص)۔

مذ ہب ہے تیرا سب کی بھلائی
مسلک ہے تیرا مشکل کشائی
دیکھ اپنی امت کی خستہ حالی
سارے نبی تیرے در کے سوالی
شاہ مدینہ (ص) شاہ مدینہ (ص)۔

ہے نور تیرا شمس و قمر میں
تیرے لبوں کی لالی گہر میں
پھولوں نے یری خوشبو چرا لی
سارے نبی تیرے در کے سوالی
شاہ مدینہ (ص) شاہ مدینہ (ص)۔

تنویر نقوی

سائرہ نسیم کی آواز میں

شاہدہ منی کی آواز میں

About Yasir Imran

Yasir Imran is a Pakistani living in Saudi Arabia. He writes because he want to express his thoughts. It is not necessary you agree what he says, You may express your thoughts in your comments. Once reviewed and approved your comments will appear in the discussion.
This entry was posted in Islam, Poetry, Urdu and tagged , , , , , , , , , , . Bookmark the permalink.

5 Responses to شاہ مدینہ صلی اللہ علیہ والہ وسلم

  1. بچپن سے یہ نعت سن رہے ہیں۔ ابھی بھی گلیوں میں فقیر اسے گاتے پھرتے ہیں۔ اس کو سن کر ہمیشہ یہ احساس ہوتا ہے کہ اس نعت کو لکھنے والے نے اللہ کے نبی سے بہت سی وہ صفات منسوب کر دی ہیں جو صرف اللہ کے لیے خاص ہیں۔:(

    • Yasir Imran says:

      احمد بھائی۔ ہاں بچپن سے سنا تو ہے لیکن مجھے اس نعت میں ایسی کوئی غیر مناسب بات نظر نہیں آئی۔ میری معلومات میں اضافے کے لیے بتا دیجیے کہ کون سے غیر مناسب بات ہے اس میں۔

  2. عثمان says:

    Yasir Imran :
    احمد بھائی۔ ہاں بچپن سے سنا تو ہے لیکن مجھے اس نعت میں ایسی کوئی غیر مناسب بات نظر نہیں آئی۔ میری معلومات میں اضافے کے لیے بتا دیجیے کہ کون سے غیر مناسب بات ہے اس میں۔

    ٰیاسر بھائی!
    نعت تو بہت اچھی ہے اس میں کوئی شک نہیں۔۔۔لیکن میرے خیال میں احمد صاحب کی بات میں بھی وزن ہے۔ آپ کے پوچھنے پر اس کے کچھ اشعار درج کر رہا ہوں۔
    “سارے نبی تیرے در کے سوالی”
    اور
    “قدموں میں تیرے عرش بریں ہے”
    یہ الفاظ صرف خالق کائنات کی شان میں ہی کہے جا سکتے ہیں۔ مخلوق کے لئے زیب نہیں دیتے۔

    • Yasir Imran says:

      عثمان بھائی۔ جی ہاں میں اتفاق کرتا ہوں۔ یہ والے شعر واقعی مناسب نہیں لگتے۔ بہت شکریہ آپ نے توجہ دلائی۔

  3. Masha allah,
    These are nice poems

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s