کیا جیو واقعی پاکستان دوست چینل ہے؟


میرا پاکستان نے جیو کے ایک پروگرام  عالیہ نے پاکستان چھوڑ دیا کے حوالے سے ایک تحریر لکھی ہے، جس میں جیو کی پاکستان مخالف پالیسی پر بحث کی گئی ہے، اس سلسلے میں میں بھی  کچھ کہنا چاہتا ہوں۔ ہم اکثر پاکستانی جیو پر اندھا اعتماد رکرتے ہیں، کیا آپ کو واقعی یقین ہے کہ جیو ایک پاکستان دوست میڈیا ہے، کیا جیو پر جو بھی دکھایا جاتا ہے ہو ہمیشہ سچ ہوتا ہے؟میں نے اپنے بلاگ پر پہلے بھی ایک تحریر شائع کی تھی جس میں جیو ٹی وی پاکستانی جھنڈے کو غلط انداز سے پیش کر رہا تھا۔

کیا جیو کبھی سچ کبھی جھوٹ کی آڑ میں پاکستان کے اندر انتشار ، افراتفری، نااتفاق رائے پھیلانے کے پالیسی پر عمل درآمد تو نہیں، بہت سارے آن لائن ذرائع ابلاغ ایک عرصے سے شور مچا رہے ہیں کہ جیو ایک  پاکستانی چینل نہیں اور اسکا مقصد یہودی عناصر کے عزائم کی تکمیل ہے، ساتھ ہی بیشتر بلاگز پر اس کے متعلق ثبوت بھی دیے گئے ہیں، مشرف کے دور سے لے کر موجودہ وقت تک جیو نے زیادہ تر اوقات میں حکومت مخالف رپورٹنگ کی، اس رپورٹنگ کا مقصد پاکستانی عوام کے اعتماد حاصل کرنا ہے کیونکہ لوگ یہ خیال کریں گے کہ جو چینل حکومت کے خلاف بول رہا ہے وہ یقینن سچ ہی ہو گا، اس تاثر کو اور پختہ کرنے کے لیے جیو نے اکثر اوقات حقیقت میں سچی رپورٹنگ بھی کی۔ لیکن جیو کی بنیادی پالیسی سچ نہیں بلکہ پہلے نمبر پر پاکستانی عوام کا اعتماد حاصل کرنا، پھر اس اعتماد کو پاکستان دشمن طاقتوں کے مقاصد کے لیے کیش کرنا۔

جیو کی متعلق میرے ذہن میں بیشتر اوقات یہ بات بھی کلبلاتی رہی کہ جیو کو رپورٹنگ کے لیے اتنا وافر پیسہ کہاں سے دستیاب ہوتا ہے، کیوں کہ جیو کے سٹاف ہرخبر والی جگہ پر سب سے پہلے پہنچتا، سب سے زیادہ دیر تک وہاں قیام کرتا، اس دوران کمرشلز بھی زیادہ نہیں چلتی تھی اور جیو کو کئی دفعہ پابندیوں کا سامنا بھی کرنا پڑا تو یہ چینل اتنی مشکلات کے باوجود کیسے سنبھل گیا۔

جیو کی ڈرامہ چینل پر غور کریں تو آپ کو کثرت سے اس انداز کے ڈرامہ، فلم اور گانے دیکھنے کو ملیں گے جو پاکستانی ثقافت سے ذرا مطابقت نہیں رکھتے بلکہ بھارتی ثقافت سے مطابقت رکھتے ہیں، میں بہت عرصہ تک جیو کا بہت بڑا فین رہا ہوں، لیکن مسلسل حکومت کے خلاف رہنے کی جیو کی پالیسی مجھے یہ سوچنے پر مجبور کر رہی ہے کہ کہیں جیو کا مقصد پاکستان میں انتشار پھیلانا تو نہیں،

جیو سے منسلک رپورٹرز، حامد میر، کامران خان وغیرہ کی میں بہت عزت کرتا ہوں لیکن کسی بھی انسان پر اتنا اعتماد کرنا بے وقوفی ہے، پاکستانی عوام کے تمام ذرائع ابلاغ کی بات سننی چاہیے ، صرف جیو پر آنکھیں بند کر کے اعتماد کرنا بھی ہمارے لیے نقصان کا باعث ہو سکتا ہے۔ میں نے جیو پر اپنا اعتماد کم کر دیا لیکن جیو کے مخالف بات کرنے والوں پر بھی پورا اعتماد نہیں کیا، میں بہت محتاط رہ کر سب کی بات سنتا ہوں اور پھر اسکا تجزیہ کرنے کے بعد نتیجہ اخز کرتا ہوں۔

اس بات کہ بہت حد تک چانس ہے کہ پاکستان مخالف طاقتیں ہمارے بیشتر ذرائع ابلاغ کو اپنے قبضے میں لے کر کبھی سچی کبھی جھوٹی خبر دکھا کر پاکستانی عوام کو گمراہ کر رہے ہیں اور پاکستان میں انتشار پھیلا رہے ہیں

جیو سی آئی اے اور سی این این کے لیے کام کر رہا ہے اس پر ایک تحریر پاک الرٹ پریس پر کچھ عرصہ پہلے  چھپی ، ملاحظہ فرمائیں۔


About Yasir Imran

Yasir Imran is a Pakistani living in Saudi Arabia. He writes because he want to express his thoughts. It is not necessary you agree what he says, You may express your thoughts in your comments. Once reviewed and approved your comments will appear in the discussion.
This entry was posted in Urdu and tagged , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , . Bookmark the permalink.

12 Responses to کیا جیو واقعی پاکستان دوست چینل ہے؟

  1. sarah says:

    Great post, I agree. I think a great addition that might help others would be learning

  2. Sohail says:

    It contains 45% shares from leading Indian investers ,I have the proof

  3. Geo tv is infact Jew tv. I agree

  4. عین ممکن ہے ایسا ہی ہو لیکن جہاں تک میں سمجھا ہوں جیو والے سب سے آگے رہنے کی دُھن میں اور کچھ سنسنی پھیلانے کی فکر میں کچھ اُلٹی سیدھی حرکتیں کر جاتے ہیں۔ سنسنی پھیلانے کے پیچھے ضروری نہیں کہ کوئی سیاسی ایجنڈا ہی ہو بس ناظرین کی توجہ درکار ہوتی ہے۔

    مجھے ذاتی طور پر “آج” ٹی وی پسند ہے کہ وہ لوگ کچھ معتدل نظر آتے ہیں لیکن پاکستان میں کوئی چیز غلط ہو رہی ہے تو یہ لوگ بھی اپنے انداز سے نشان دہی ضرور کرتے ہیں۔ میں سمجھتا ہوں کہ غلط چیز کے رپورٹ نہ ہونے سے رپورٹ ہو جانا بہتر ہے چاہے اس میں انداز سنسنی خیز ہی ہو۔

    پھر جیو کی خبریں مستند بھی ہوتی ہیں اور آپ اُنہیں دوسرے ذرائع ابلاغ سے کراس چیک کرسکتے ہیں۔ ان سب کے باوجود بھی اگر اس قسم کی قیاس آرائیاں ہے تو کچھ دلائل بھی ہونے چاہیے تاکہ دل کو سمجھایا جا سکے۔

    اہم موضوع پر قلم اُٹھانے کا بہت شکریہ!

    ۔

  5. Yasir Imran says:

    محمد احمد
    میرے بلاگ پر خوش آمدید
    میں جیو کو بہت عرصے سے دیکھ رہا ہوں اور مجھے اس میں بہت سے ایسے پہلو نظرآتے ہیں جو پاکستان اور پاکستانیوں کے لیے برے ہیں۔ جن میں حدود آرڈیننس والے اسلامی قانون کو اچھالنا بھی شامل ہے۔

  6. جیو تو ایسے مال بناو تو ایسے سمجھ نہ آئے تو دیکھو جیو

  7. محترمی و مکرمی یاسر عمران مرزا صاحب!

    یہ جاننے کے لئیے کہ کیا جیو واقعی درست رپوٹنگ کرتا ہے ۔ کیا واقعی جیو پاکستان کے مفاد میں رائے عامہ تیار کرنے میں معاون ہے۔ یا اسکے پورگرام ہمارے معاشرے میں صرف اپنے مالی مفاد کے زیر اثر پاکستان مخالف جزبات کو ہوا دے رہے ہیں۔ یہ جاننے کے لئیے اتنی گہرائی میں جانے کی ضرورت نہیں ۔

    یہ خاندان پاکستان میں ان چند دہائیوں میں دو صحفے کے اخبارات سے اتنے بڑے ٹی وی اور میڈیا نیٹ ورک کا مالک کیسے بن گیا ـ؟ جبکہ اس خاندان کے اخبار سے کہیں بہتر اخبارات جن کی دیانتدارانہ صحافت کی وجہ سے انکے جائز اشتہارات روک لئیے جاتے ہیں جنہیں عمومی طور ہمیشہ پابندیوں کا سامنا رہا ہے۔ اسکے مقابلے میں اس خاندان کے اخبار کو شروع دن کی جلدوں سے لیکر آجک تک کسی بھی تاریخ کا اخبار نکال کر دیکھ لیں ۔ ہر پرچے میں اس وقت کی حکومت کی مدح سرائی کی گئی ہوگی اور بدلے میں کڑووں کے حکومتی اشتہارت چھپے ہونگے ۔ جو اسوقت کی حکومتیں پرشوت کے طور پہ اپنی مدح رائی کرنے والے اخبارات کو دیتی تھیں۔

    اس خاندان کے مد نظر پیسے اور اختیار کا حصول رہا ہے۔ تجزئیے ، کام نویسی وغیرہ یہ متعلقہ مگر ثانوی چیزیں ہیں۔ قومی مفاد پہ ذاتی مفاد کو ترجیج دینے والے کبھی سگے نہیں ہوتے۔

    ہندؤستان میں ممبئی بم دہماکوں کے موقع پہ پورے ھندوسستان کا میڈیا پاکستان کے خلاف زہر اگلنے میں ایک ہو گیا تھا مگر ادہر گنگا الٹی بہہ رہی تھی۔

  8. Yasir Imran says:

    جناب جاوید گوندل صاحب،
    میرے بلاگ پر خوش آمدید
    جی واقعی آپ نے صحیح دلائل سے بات کی، جنگ گروپ کے اخبار کو تو میں زیادہ نہیں جانتا، مگر جب سے جیو کا افتتاح ہوا تب سے جیو دیکھ رہا ہوں، لیکن میری سمجھ میں نہیں آتا ک جب اتنے لوگ جیو کے متعلق ایسی حقیقتوں سے واقف ہیں پھر اتنی بڑی بڑی شخصیات جن میں عمران خان اور نواز شریف بھی شامل ہیں، کیوں جیو کی حمایت کرتے نظر آتے ہیں، کیا یہ لوگ ایسی باتیں نہیں جانتے، ہو سکتا ہے جانتے بھی ہوں مگر مصلحتا خاموش ہوں
    خیر، جیو کا کردار اب ہمارے عوام پر جلد منکشف ہو جانا چاہیے،

    کامی صاحب ، رائے دینے کا شکریہ

  9. Marghoob says:

    no, it is not Pakistani channel !

  10. Mutant says:

    Great post yar! keep it up!
    I 100% agree with you that one should not form opinion by just watching one channel. One should keep its mind open to many sources.
    Plus geo drama channel is always airing something which is not part of our culture.Their present dramas contain a lot of vulgarity.And they also air Indian award shows & movies which should not be by a Pakistani channel.

  11. Pingback: پاکستانی میڈیا کا منفی کردار | Yasir Imran Mirza

  12. M.Rehan says:

    i agree
    Geo tv is infected Jewel

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s