کیا لانگ مارچ کے تمام مقاصد پورے ہو گئے


مبارک باد

بلاشبہ پاکستانی عوام فخر کے لائق ہیں جنہوں نے اس عظیم مقصد کو پورا کرنے کے لیے وکلا اور سیاسی جماعتوں کی پکار پر لبیک کہا، ہم مسلم لیگ نواز کے صدر جناب نواز شریف ، پاکستان تحریک انصاف کے جناب عمران خان اور جماعت اسلامی کے قاضی حسین احمد صاحب کے تہہ دل سے مشکور ہیں جو پاکستانی عوام کو انصاف دلانے کے لیے کھڑے ہو گئے اور انہوں نے پاکستانی عوام کے دیے ہوے ووٹوں کا احترام کیا، یہ لوگ چاہتے تو دوسری سیاسی پارٹیوں کی طرح عہدے  اور مرعات لے کر خاموشی سے بیٹھ سکتے تھے، جس طرح ایم کیو ایم نے کیا، جس طرح پیپلز پارٹی نے کیا، جس طرح عوامی نیشنل پارٹی نے کیا، جس طرح مولانا ڈیزل (فضل الرحمن)کی پارٹی نے کیا

congratulations-pakistan

congratulations-pakistan

مگر انہوں نے پاکستانی عوام کے مینڈیٹ کا احترام کیا  بلاشبہ یہ وکلا تحریک کی کامیابی ہے کے چیف جسٹس افتحار محمد چودھری بحال ہو گئے، مگر اس تحریک کو کامیاب بنانے اور عوام کو حصول انصاف کے لیے سڑکوں پر لانے میں ان سیاسی پارٹیوں کا بھی بڑا ہاتھ ہے، عوام کے اس ٹھاٹھیں مارتے سمندر کے سامنے آنے سے ہی حکومت وقت بوکھلائی اور ججوں کی بحالی پر مجبور ہوئی

کیا لانگ مارچ کے تمام مقاصد پورے ہو گئے، اس بات کی کیاضمانت ہے کہ ایک وعدہ خلاف حکومت دوسری بار کیے گئے تمام وعدے پورے کرے گی؟

مگر یہاں ایک اور اہم بات یہ ہے ک لانگ مارچ کو ختم کرنے میں کچھ جلد بازی کی گئی، حکومت کے ساتھ مکمل طور پر مذاکرات اور تمام مطالبات منوانے کے بعد ایسا کرنا چاہیے تھا کیوں کہ ایسی وعدہ خلاف حکومت جو پہلے بھی کئی وعدے توڑ چکی ہو سے کچھ بعید نہیں، کہ لانگ مارچ کے ختم ہونے کے بعد پھر وہ اپنے وعدوں سے مکر نہ جائے اور یقیننا دوسری بار لانگ مارچ کرنا اور عوام کو پھر سڑکوں پر لانا ایک زحمت والی بات ہو گی

زرداری حکومت نے کرپٹ ترین افراد کو بڑے بڑے عہدے دے دیے ہیں، جن میں گورنر سلمان تاثیر، سینٹ کے چیئرمیں فاروق نائیک اوراٹارنی جنرل لطیف کھوسہ چند اہم نام ہیں، ضرورت اس امر کی ہے کہ ان کرپٹ افراد کو ان عہدوں سے ہٹایا جائے، پولیس کے محکمے میں سلمان تاثیر کے بھرتی کیے ہوے کرپٹ افسران کو ہٹایا جائے اور پنجاب حکومت مسلم لیگ نواز کو واپس کی جائے

یقیننا کچھ سوچ کر ہی نواز شریف صاحب اور وکلا نے لانگ مارچ کو ختم کیا، مگر پھر بھی میرے یہ تحفظات ہیں جو میں نے اوپر بیان کیے


About Yasir Imran

Yasir Imran is a Pakistani living in Saudi Arabia. He writes because he want to express his thoughts. It is not necessary you agree what he says, You may express your thoughts in your comments. Once reviewed and approved your comments will appear in the discussion.
This entry was posted in Urdu and tagged , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , . Bookmark the permalink.

4 Responses to کیا لانگ مارچ کے تمام مقاصد پورے ہو گئے

  1. ابھی تو سکول میں داخلے کا امتحان پاس کر کے داخلہ حاصل کیا ۔ اس کے بعد کتابین پڑھنا ہیں اور سبق یاد کر کے امتحانات پاس کرنے ۔ ناؤ کو دھارے میں ڈال دیا ہے تو کٹ ہی جائے گا سفر آہستہ آہستہ

  2. jafar says:

    یاسر صاحب۔۔۔ وزیر قانون نائیک صاحب تھے جو اب چئیرمین سینٹ ہوگئے ہیں۔ غالبا آپ لطیف کھوسہ کا ذکر کرنا چاہتے ہوں گے جو اٹارنی جنرل ہیں جبکہ ذوالفقار کھوسہ تو مسلم لیگ پنجاب کے صدر ہیں۔۔۔
    :shock:
    لگتا ہے دو تین دن سے آپ سوئے نہیں۔ اگلی پوسٹ ذرا نیند پوری کرکے لکھیں
    :grin: :grin: :grin:

  3. Yasir Imran says:

    جی کیا نام بتایا آپ نے ، ہاں وہے صاحب جو آپ نے کہیے
    مگر کیا یہ کرپٹ اور بکاؤ لوگ نیں
    کیا آپ اتفاق نہیں کرتے ؟

  4. long march kay maqasad tab pooray hoon gay jan us awam ko bhi insaaf milna shoro ho jaye ga jis nay sarak pay aa kay police kay danday khaye adliya ki azadi kay liye.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s